دل چیر دینے والی خبر ایک ہی دن میں دوسرا بڑا حادثہ : اہم اسلامی ملک کا طیارہ تباہ ، 78 مسافروں کی ہلاکت کی اطلاعات آ گئیں

اسلام آباد(ویب ڈیسک) بنگلہ دیش کا ایک مسافر طیارہ نیپال کے دارالحکومت کھٹمنڈو کے ایئر پورٹ کے قریب گر کر تباہ ہوگیا،عالمی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق طیارے سے اٹھنے والے دھویں کے بادل دور سے ہی دیکھے جاسکتے ہیں، حکام نے حادثے میں ہلاکتوں کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔نیپالی اخبار کھٹمنڈو پوسٹ

کے مطابق بنگلہ دیشی یو ایس بنگلہ ایئرلائن کا طیارہ کھٹمنڈو میں ترائی بھون انٹرنیشنل ایئر پورٹ (ٹی آئی اے)کے قریب گر کرتباہ ہوگیا ہے جس میں ہلاکتوں کا خدشہ ہے۔ ٹی آئی اے کے ترجمان پریم ناتھ ٹھاکر کے مطابق بنگلہ دیشی ایئر لائن کا فوکرطیارہ لینڈنگ کے دوران رن وے سے ہٹ گیا اور قریب واقع فٹبال سٹیڈیم میں گر کر تباہ ہوگیا۔یو ایس بنگلہ ایئر لائن کی پرواز ایس 2 اے جی یو نے ڈھاکہ سے اڑان بھری اور 2 بج کر 20 منٹ پر لینڈنگ کی کوشش کی۔ طیارہ حادثے کے فوری بعد ریسکیو ٹیموں نے جائے حادثہ پر پہنچ کر امدادی کارروائیاں شروع کردی ہیں یاد رہے کہ آج صبح ترکی کا پرائیوٹ طیارہ ایران میں گر کر تباہ ہو گیا، حادثے میں متعدد افراد کی ہلاکت کی اطلاع ہے۔ایرانی خبر ایجنسی کے مطابق ترکی کا نجی مسافر طیارہ شہر کرد کے قریب گر کر تباہ ہوگیا جس میں 20 مسافر سوار تھے۔طیارہ شارجہ سے استنبول جا رہا تھا کہ ایران کے جنوب مغربی صوبے چہارمحل کے شہر بختیاری کے قریب گر کر تباہ ہوگیا۔ حادثے میں گیارہ افراد کی ہلاکت کی غیر مصدقہ اطلاعات ہیں ۔یاد رہے ایک اور خبر کے مطابق شام کی جنگ میں کئی فریقین باہم برسرپیکار ہیں لیکن ان کا نشانہ بننے والا صرف ایک ہی فریق ہے اور وہ شام کے عوام ہیں۔ عالمی ہیومن رائٹس ادارے کا کہنا ہے کہ اب ترکی بھی شامی عوام پر بم برسانے والے ممالک کی فہرست میں شامل ہو گیا ہے کیونکہ ترک افواج شام کے شہر عفرین میں بلاتفریق بمباری کر رہی ہیں،

جس کا سب سے زیادہ نشانہ عام شہری بن رہے ہیں۔برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق ایمنسٹی انٹرنیشنل کا کہنا ہے کہ وہ ترک افواج کی بلاامتیاز بمباری کی تصدیق کر چکی ہے۔ اس نے 15 عینی شاہدین سے بات کی ہے جنہوں نے عفرین کی سنگین صورتحال کے متعلق بتایا ہے۔ کردش ریڈکریسنٹ کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ 22جنوری سے 21فروری کے درمیان ترک فوج کی بمباری سے 93عام شہری جاں بحق ہو چکے ہیں جن میں 24معصوم بچے شامل ہیں۔دوسری طرف ترک فوج کے خلاف لڑنے والے کرد جنگجوئوں کے مارٹرگولے لگنے سے 4عام شہری جاں بحق ہوئے جن میں ایک بچہ شامل ہے۔واضح رہے کہ ترک فوج شام میں کرد جنگجوئوں کے خلاف لڑ رہی ہے ۔ ترکی کا کہنا ہے کہ کرد جنگجو ترکی کے اندر دہشت گردانہ کارروائیوں میں ملوث ہیں جس کی وجہ سے ان کا قلع قمع کیا جا رہا ہے۔۔دوسری طرف ترک فوج کے خلاف لڑنے والے کرد جنگجوئوں کے مارٹرگولے لگنے سے 4عام شہری جاں بحق ہوئے جن میں ایک بچہ شامل ہے۔واضح رہے کہ ترک فوج شام میں کرد جنگجوئوں کے خلاف لڑ رہی ہے ۔ ترکی کا کہنا ہے کہ کرد جنگجو ترکی کے اندر دہشت گردانہ کارروائیوں میں ملوث ہیں جس کی وجہ سے ان کا قلع قمع کیا جا رہا ہے۔

وا ضح رہے ترکی کے صدر رجب طیب اردوگان نے شام کے ایک اہم اسٹریٹجک قصبے پر قبضے کے ایک روز بعد ہی اعلان کردیا ہے کہ ترک فورسز اور اتحادی جنگجو کسی بھی لمحے کردوں کے زیرتسلط علاقے عفرین میں داخل ہوسکتے ہیں۔انقرہ میں حکمراں جماعت کے اجلاس میں طیب اردوگان نے کہا کہ ‘اب ہمارا مقصد عفرین ہے، ہم عفرین کو گھیر چکے ہیں اور ان شااللہ کسی بھی لمحے ہم عفرین میں داخل ہوسکتے ہیں’۔خیال رہے کہ ترک افواج نے ایک روز قبل ہی عفرین کے مغرب میں واقع قصبے جندیرس میں قبضہ کرلیا تھا۔ترک صدر نے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ ‘عفرین میں آپریشن اس وقت تک جاری رہے گا جب تک یہ دہشت گردی ختم نہیں ہوتی’۔یاد رہے کہ ترکی کی جانب سے 20 جنوری کو کردش پیپلز پروٹیکشن یونٹس (وائی پی جی) کے خلاف ان کے زیر قبضہ علاقے عفرین میں آپریشن ‘اولائیو برانچ’ کا آغاز کیا تھا جس کو ترکی ایک دہشت گرد تنظیم قرار دیتا ہے۔عفرین میں جاری اس آپریشن میں اب تک ترکی کے 42 فوجی اپنی جانیں گنوا چکے ہیں تاہم ترک فوج اور شام میں موجود ان کے اتحادیوں نے کئی علاقوں میں قبضہ کرکے آپریشن میں نئی روح پھونکی ہے۔جندیریس کا قبضہ حاصل کرکے ترکی اور ان کے اتحادی عفرین میں قبضے کے اپنے مقصد کے بہت قریب پہنچ گئے ہیں اور ماہرین کا خیال ہے کہ ترکی کو اپنے مقصد کے حصول کے لیے راستہ صاف ہو چکا ہے۔دوسری جانب ترکی کے اس آپریشن سے ان کے امریکا کے ساتھ تعلقات میں بھی کشیدگی پیدا ہوئی ہے کیونکہ جس ملیشیا کےخلاف ترکی کارروائی کررہا ہے وہ نیٹو میں شامل ایک ملک کی اتحادی ہے

انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مین
loading...
اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
خصوصی فیچرز

تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس

صحت