’مجھے اپنی سہیلی کا بھائی بہت پسند تھا، کل رات میں اس کے گھر گئی تو وہ اُدھر نہ تھا بلکہ اس کی ٹیبل پر ایک کاغذ پڑا تھا

’مجھے اپنی سہیلی کا بھائی بہت پسند تھا، کل رات میں اس کے گھر گئی تو وہ اُدھر نہ تھا بلکہ اس کی ٹیبل پر ایک کاغذ پڑا تھا
اس نے میرے دانتوں اور آواز کا مذاق اڑایا تھا اورلکھا تھا کہ میں پیچھے ہی پڑ جاتی ہوں، حالانکہ میں صرف ایک بار اس کے ساتھ باہر گئی تھی. اس کے مطابق میں محض ایک مصیبت ہوں اور اسے مجھ سے بچنے اور کسی اور لڑکی کو ڈھونڈنے کے لئے گہری سوچ بچار کی ضرورت ہے. یہ باتیں پڑھ کر میرا دل بری طرح ٹوٹ گیا.

میں تصور بھی نہیں کر سکتی تھی کہ وہ ایسی سوچ رکھتا ہو گا. ان باتوں کی وجہ سے میرا خود سے بھی اعتماد اٹھ گیا ہے اور میں احساس کمتری محسوس کرنے لگی ہوں. مجھے سمجھ نہیں آ رہی کہ میں کیا کروں؟ کیا میں اس سے بات کروں کہ اس نے میرے بارے میں ایسی باتیں کیوں لکھی ہیں؟اس لڑکی کی افسوسناک داستان پڑھنے والے سوشل میڈیا صارفین نے ہمدردی کا اظہار بھی کیا ہے اور اچھے مشورے بھی دئیے ہیں. مثال کے طور پر ایک صاحب کا کہنا تھا ”آپ اس بات کو اپنے لئے مثبت خیال کریں، کیونکہ اگر یہ باتیں معلوم نا ہوتیں تو کبھی آپ یہ نا جان پاتیں کو اس کی سوچ کتنی گھٹیا ہے. اس سے بات کرنے کی کوئی ضرورت نہیں کیونکہ وہ اس قابل نہیں کہ آپ اس پر اپنا وقت ضائع کریں. “

ایک خاتون صارف کا کہنا تھا ”آپ اس بات کو دل پر بالکل نا لیں کیونکہ اس کا یہ مطلب نہیں کہ آپ میں کوئی کمی ہے، بلکہ یہ باتیں کوئی بھی احمق شخص کسی بھی اچھے اور شائستہ انسان کے بارے میں کہہ سکتا ہے. آپ کو خود پر بھروسہ رکھنا چاہیے اور ایسے لوگوں کی گھٹیا سوچ کی اہمیت نہیں دینی چاہیے.میرا آپ کے لئے مشورہ ہے کہ جو آپ کی قدر نہیں کرتا اس کے لئے آپ کے پاس ذرا بھی وقت نہیں ہونا چاہیے. ایسے لوگوں کے بارے سوچنا بھی اپنا قیمتی وقت ضائع کرنے کے مترادف ہے. “

انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مین
loading...
اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں
خصوصی فیچرز

تازہ ترین خبریں

دلچسپ و عجیب

بزنس

صحت